ہیکٹیویزم اور اس کے متعلق معلومات

The Guy Fox Mask ، جو دنیا بھر میں مظاہروں میں استعمال ہوتا ہے وہ اب انٹرنیٹ پر بھی نظر آتا ہے۔یہ ماسک “V for Vendetta” میں ایک انتشار پسند اور دہشت گرد مرکزی کردار V، نے پہنا تھا،جو ایک Catholic Officer سے متاثر تھا جو 1605 میں لندن میں پروٹسٹنٹ King Jacob I اور اس کی پارلیمنٹ کو اڑانا چاہتا تھا۔
جبکہ 2020 سے ایک Reddit تھریڈ بھی یہ اشارہ کرتا ہے کہ اس کے ساتھیوں بھی V for Vendetta فلم سے متاثر نہیں تھے، بلکہ ایک میم “Epic Fail Guy” سے متاثر دکھائے گئے تھے اور ان میں The Guy Fox Mask بھی شامل تھا۔

2008 میں، نامعلوم Troll گروپ، جسے ایک سال پہلے Fox News نے “Inrternet Hate Machine” کا نام دیا تھا، وہ Hacktivism میں ایک اہم موڑ ثابت ہوا۔ انھوں نے ایک Scientology پروموشنل ویڈیو عوام تک پہنچائی تھی، اور اس فرقے کو بڑے پیمانے پر الزامات کا سامنا بھی کرنا پڑا تھا۔اس کے بعد گمنام ممبر گریگ ہوش نے”Scientology کے لیے پیغام” کے نام پر پہلا ویڈیو اعلان ریکارڈ کیا۔ یہ ویڈیو بہت وائرل ہوئی، جس کے بعد Scientology کے خلاف بین الاقوامی مظاہرے ہوئے، ان مظاہروں میں تصویروں پر The Guy Fox mas کا غلبہ رہا۔ ہیکٹیوسٹ۔ 2010 اور 2011 میں، Anonymous (نامعلوم یا گمنام) آخرکار ہیکٹی ازم اور ڈیجیٹل احتجاج کی علامت بن گیا، اور دنیا بھر میں اس پرگروپس اور Off shoots بنائے گئے، جو بنیادی طور پر انٹرنیٹ پر پابندیوں کی مختلف قسم کی کارروائیوں میں مخالفت کرتے تھے۔

Hacktivism میں بھی دھوکہ دہی اور گرفتاریاں موجود ہیں۔ فروری 2012 میں، Hector Monsigor جوSabu تخلص کے ساتھ گمنام گروپ Lulzsec کا ایک مقبول شریک بانی تھا وہ بلآخر FBI کے جال میں پھس گیا تھا۔ خفیہ سروس کے دباؤ میں کئی گرفتاریاں ہوئی، جن میں سے کچھ کو سزائیں بھی دی گئیں۔2013 میں، Hacking میں ملوث مزید گمنام ارکان کوگرفتار کیا گیا، جن میں معروف سربراہان جیسے Jeremy Hemend ہیمنڈ اور مصطفیٰ البسام شامل ہیں۔2015 تکHacktivis کم فعال تھی، لیکن مستقبل میں مضبوط حکمت عملی کی تیاریوں میں مصروف نظر آئی۔

2020 میں George Floyd کے قتل کے بعد “Black Lives Meter” کے احتجاج میں بھی Hacktivism موجود تھی۔ کورونا وبائی مرض کے دوران، “Operation Tinfoil کی شکل میں دنیا کے سامنے آئی۔ مثال کے طور پر، کورونا سے انکار کرنے والے Attila Hildmann کی ویب سائٹ کو ہائی جیک کیا گیا۔ 2022 میں، Tesla کے بانی ایلون مسک، کو بھی نشانہ بنایا گیا اور اب یوکرین کی جنگ میں، نامعلوم دھمکیوں کی جانب سے ولادیمیر پوتن کو جنگ کا پیغام موصول ہوا۔

ویب پر، گمنام یا نامعلوم کے نام پر بہت سی کارروائیاں ہوتی ہیں۔ جن میں لوگوں کو ایک طاقتور برانڈ پیش کیا جاتا ہے جس کےذریعے ڈیجیٹل اور حقیقی احتجاج کو بڑھاوا یا آواز دی جاسکتی ہے۔ مثال کے طور پروال سٹریٹ پر قبضہ کی تحریک ہو، تیونس میں “Jasmine Revolution” ہو، یا یوکرین کی جنگ، گمنام تحریک نے متعدد عالمی سیاسی واقعات میں معلومات کی آزادی اور انسانی حقوق کی حمایت کی ہے۔ The Guy Fox mas اب ایک نمایاں بین الاقوامی علامت بن گیا ہے۔ لیکن تحریک کی کوئی اخلاقی وابستگی نہیں ہے۔ کسی گروپ یا انفرادی کارکنوں کے ایجنڈے پر اگلا ہدف کون اور کیا ہوگا اس کا اندازہ لگانا مشکل ہے۔

Hacktivism کا ایک پہلو جو اس سے واضح ہوتا ہے کہ یہ Hacktivism نہ صرف باصلاحیت Hackers پر مشتمل ہے، بلکہ فعال طور پر بات چیت بھی کرتا ہے تاکہ کوئی بھی اس کا حصہ بن سکے۔ جسے Anonymous نے یوکرین میں جنگ کے موقع پر شروع کیا تھا۔ حکومت کے censorship کے اقدامات سے بچنے کے لیے روسی آبادی کے لیے جنگ مخالف پیغامات کو سیاحتی مقامات کی گوگل ریٹنگ میں شامل کیا۔ اس کے لیے آئی ٹی کی مہارتوں کی ضرورت نہیں پڑتی۔ بلکہ صرف انٹرنیٹ تک رسائی اور گوگل اکاؤنٹ ہی کافی ہے۔ یہ DDOS حملوں سے ملتی جلتی کہانی ہے جو ایک قسم کے ڈیجیٹل دھرنے کی طرح کام کرتی ہے۔

حقیقت تو یہ ہے کہ کوئی بھی Annon (نامعلوم) ہونے کا بہانہ کرسکتا ہے۔ مثال کے طور پر جرمنی میں، “Anonymous.Kollektiv” کے نام سے right-wing کی نفرت انگیز تحریک برسوں سے فیس بک کی زینت بنی رہی اور آخرکار نفرت انگیز سائٹ کو فیس بک سے ہٹا دیا گیا تھا۔