بٹ کوائن کا 100,000$ کی بلند ترین سطح پرپہنچنے کا امکان

ایپل کے شریک بانی اسٹیو ووزنیاک جن کا بٹ کوائن کے بڑے مداحوں میں شمار کیا جاتا ہے۔ اسٹیو ووزنیاک کے خیال میں بٹ کوائن کی قیمت 100,000$ سے زیادہ کی بلند ترین سطح پر پہنچے گی۔ ایپل کے شریک بانی اسٹیو ووزنیاک نے ماضی میں متعدد بار بٹ کوائن میں اپنی گہری دلچسپی کا اظہار کیا ۔
دوسری چیزوں کے علاوہ انہوں نے بٹ کوائن کو ایک “ریاضیاتی معجزہ ” قرار دیا ہے۔ ووزنیاک سونے اور بٹ کوائن کے درمیان کوئی موازنہ نہیں کرتے۔ چند ہفتے پہلے ہی ووزنیاک نے بٹ کوائن کو “خالص سونا” قرار دیا تھا ۔ اگرچہ بٹ کوائن اصل میں ادائیگی کے ایک ذریعہ کے طور پر تصور کیا گیا تھا۔ لیکن اب اس کے قدر دان اس کی ذخیراندوزی کے بارے میں سوچ رہے ہیں۔ موجودہ صورتحال کو دیکھتے ہوئے اپیل کے شریک بانی ووزنیاک کا خیال ہے کہ بٹ کوائن 100,000$ تک کی سطح کو عبور کرے گا۔ Steve-O’s Wild Ride Podcast پر گفتگو کرتے ہوئے وزنیاک نے بٹ کوائن اور کرپٹو کرنسیوں کی کامیابی پر اپنی حیرت کا اظہار کیا۔ انہوں نے دعویٰ کیا کہ یہ فنانس کا مستقبل ہو سکتا ہے۔ انہوں نے مزید بٹ کوائن کے بارے میں کہا کہ “میں اسے ریاضیاتی طور پر بیان تو نہیں کر سکتا لیکن مجھے لگتا ہے کہ کرپٹو کرنسی میں دلچسپی اب اتنی زیادہ ہے کہ میں نے کوائن بیس پر ایک آن لائن والیٹ اکاؤنٹ میں پیسے ڈال دیے ہیں۔ اور اب میرے پاس پیسہ موجود ہے”۔

71 سالہ اپیل کے شریک بانی ووزنیاک نے انکشاف کیا کہ وہ ہمیشہ بٹ کوائن کے ساتھ تجربہ کرنا چاہتے تھے۔ ان کی ابتدائی کرپٹو سرمایہ کاری نے بھی انہیں زبردست منافع دیا۔ پھر بھی ایسا لگتا تھا کہ وہ بہت مضبوط ہولڈر نہیں ثابت ہوئے۔ وہ اس میں تجربہ کرنا اور سب کچھ سیکھنا چاہتے تھے۔ مگر پھر بٹ کوائن کی قیمت میں تیزی سے اضافہ ہوا۔ جس سے وہ خوفزدہ ہو گئے اور اپنے بٹ کوائنز میں سے ایک کے علاوہ باقی سب بیچ دیا۔

ایپل کے شریک بانی نے مستقبل کے تجربات کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ زندگی میں بٹ کوائن کھیلنے کے لیے کافی ہواور اس سے تجربہ کیا جاسکے لیکن اس سے پیسہ کمانا میرا مقصد نہیں ۔ مگر دوبارہ جب بٹ کوائن میں تیزی سے اضافہ ہوا تب بھی میں نے پیسہ کمایا۔ اب مجھے یقین ہے کہ بٹ کوائن اپنی منزل کو چھولے گا۔ فی الحال اس کی منزل بہت دور ہے۔ کیونکہ بٹ کوائن پچھلے چند ہفتوں سے 33,000$ اور 45,000$ کے درمیان رہا ہے۔ BTC فی الحال 39,000$ پر ٹریڈ کر رہا ہے۔ 10 نومبر 2021 کو سب سے بڑی اور قدیم ترین کریپٹو کرنسی تقریباً 68,800$ امریکی ڈالر کی گزشتہ ہمہ وقت بلند ترین سطح پر پہنچ گئی۔ اس کے بعد ڈیجیٹل کرنسی کی قیمت تیزی سے گر گئی۔

صرف بٹ کوائن کورس ہی نہیں ہے جو سب کی توجہ کا مرکز بنا ہوا ہے۔ بلکہ پروف آف ورک الگورتھم کی وجہ سے ماحولیاتی خدشات بھی بڑھ رہے ہیں۔ اسٹیوووزنیاک بھی نہیں مانتے کہ بٹ کوائن ماحول کے لیے خطرہ ہے۔ ان کی رائے میں یہاں بٹ کوائن نیٹ ورک کے مقابلے میں کئی بہت بڑے مسائل جنم لیں گے۔