وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کی زیر صدارت سندھ کابینہ کا اجلاس

پاکستانی میڈیا کے مطابق وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کی صدارت میں سندھ کابینہ کا اجلاس ہوا.اجلاس وزیراعلیٰ ہائوس میں منعقد کیا گیا.اجلاس میں چیف سیکریٹری ،صوبائی وزراء ، ایڈوائزر ، اسپیشل اسسٹنٹ، چیئرپرسن پی اینڈ ڈی اور متعلقہ سیکریٹریز بھی شریک تھے.

وزیراعلیٰ سندھ نے تمام کابینہ اراکین خاص طورپر نئے وزراء ، ایڈوئزر اور اسپیشل اسسٹنٹ کو مبارکباد د.وزیراعلیٰ سندھ نے کابینہ کو ترقیاتی کاموں کے حوالے سے بریف بھی کیا.انہوں نے بتایا کہ 22-2021 کا ترقیاتی بجٹ 329.02 بلین ہے.اس میں 222.50 بلین صوبائی اے ڈی پی ، 30 بلین ڈسٹرکٹ اے ڈی پی، 71.16 بلین فارین فنڈنگ پروجیکٹ اور 5.36 وفاقی پی ایس ڈی پی شامل ہیں .نئے سال میں 1646 جاری منصوبوں کے لیے 138.384 بلین رکھے گئے ہیں.138.384 بلین میں سے 38.706 بلین نئے سال کے شروع میں جاری کیے.38.706 بلین میں 2 مہینوں (جولائی ۔ اگست ) 8.173 بلین روپے خرچ ہوچکے ہیں .ان فنڈز کی یوٹیلائزیشن کی وجہ بروقت فنڈز کی ریلیز ہے .

وزیراعلیٰ سندھ نے تمام وزراء کو ہدایت کی کہ اُن پر بڑی اہم ذمہ داری عائد ہوتی ہے کہ اپنے ڈپارٹمنٹ کے ترقیاتی کاموں کوبروقت مکمل کروائیں.تمام ترقیاتی کاموں کی رفتار اور افادیت کو چیک کرتے رہیں.کابینہ نے پبلک فنانشل مینجمنٹ ریفارم اسٹریٹیجی پر غورو خوض کیا اور منظوری دی . اس کے مین فیچرس میں ٹرانسپیرینسی ، پی پی پی پروجیکٹس کی ایکزیکیوشن ، مانیٹرنگ اور ایویلیوایشن شامل ہیں.

وزیراعلیٰ سندھ نے سیکریٹری فنانس خصوصی ہدایت دی کہ ایسا طریقہ بنایا جائے جس میں انتقال کرنے والے ملازمین کی تنخواہ ریٹائرمنٹ کی عمر تک جاری رہے.انہوں نے امتیاز شیخ ، جام خان شورو اور مرتضیٰ وہاب پر کمیٹی قائم کی.یہ کمیٹی ایسے مالی پیکیج تجویز کرے گی جس سے انتقال کرنے والے ملازمین کو فوری مالی مدد مہیا کی جاسکے گی .کمیٹی ایک جامع پیکیج تجویز کرے گی.

دیگر خبریں:کورونا ٹاسک فورس کا اجلاس ،وزیرِ اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کی ہدایات

سندھ کابینہ کے اجلاس میں کابینہ نے ریویزن آف ایلی جیبلیٹی فار ریکروٹمنٹ انڈر ڈیزیز کوٹہ کی منظوری بھی دے دی. ڈیزیز کوٹہ 2ستمبر 2002 سے قابل عمل ہوگی.جو سرکاری ملازمین ستمبر 2002 سے پہلے انتقال کر گئے وہ ڈیزیز کوٹہ میں شامل نہیں ہوں گے.اگر انتقال کرنے والے ملازم کا بچہ چھوٹا یا کم عمر ہے تو اُن کو 2 سال کے اندر متعلقہ ادارے کو آگاہ کرنا ہوگا.بچہ جیسے ہی 18 سال کی عمر کا ہوجائے تو 3 مہینوں کے اندر کوٹہ سسٹم کے تحت درخواست جمع کرانا ہوگا.جو ملازمین غیر شادی شدہ ہیں تو اُس کے بہن یا بھائی ڈیزیز کوٹہ کا مستحق ہوں گے.

یہ بھی پڑھیں:یوم شہدائے پولیس پرسندھ پولیس کا خراج عقیدت