کورونا کے علاج کیلئے گولی کا استعمال منظور

کورونا وائرس کے خلاف علاج کیلئے پہلی بار گولی کے استعمال کی منظوری دینے والا امریکا دنیا کا پہلا ملک بن گیا ہے . امریکی حکومت نے کورونا وائرس کے علاج کیلئے دوا کے گھر پر استعمال کی اجازت دیدی ہے۔

امریکی فوڈاینڈ ڈرگ ایڈمنسٹریشن (ایف ڈی اے ) نے کورونا وائرس کے علاج کیلئے فائزر کی بنائی ہوئی گولی پیکسلووڈ کے استعمال کی منظوری دی۔

امریکی حکام کا کہنا ہے کہ یہ وہ پہلی گولی ہوگی جو گھر پر استعمال کی جاسکے گی اور یہ دوا 12 سال اور اس سے زائد العمر افراد کو دی جاسکے گی.

واضح رہے کہ کورونا وائرس کے خلاف پہلی گولی شدید بیماری سے حفاظت مہیا کرنے کیلئے 90 فیصد مؤثر قرار دی گئی ہے جسے نئے ویرئینٹ اومی کرون کے خلاف بھی اہم پیش رفت سمجھا جارہا ہے۔

فائزر کی بنائی ہوئی پیکسلووڈ گولی کو دن میں 2 بار 5 روز تک مسلسل استعمال کرنے سے کورونا سے تحفظ ممکن بنایا جاسکتا ہے۔

یہ بھی پڑھیں
کورونا کیخلاف فائزر کی دوا تیار،90 فیصد موثر ہونے کا دعویٰ

فرانس، ایک لاکھ 82ہزار جعلی ہیلتھ پاسز پکڑے گئے

امریکی حکومت نے دوا ساز کمپنی فائزر سے 5 عشاریہ 3 ارب ڈالر کا معاہدہ کر لیا جس کے تحت دوا کی فوری دستیابی کو یقینی بنایا جائے گا.

دوا ساز کمپنی فائزر کا کہنا ہے کہ حالیہ تجربات سے ثابت ہوا کہ یہ دوا کورونا وائرس سمیت اومی کرون اور دیگر ویرینٹ کے خلاف بھی مؤثر ہے۔دوا کے استعمال سے کورونا کے مریضوں کی قوتِ مدافعت بہتر ہوجاتی ہے۔