health care workers hospital

برطانیہ کا ہیلتھ ورکرز کیلئے امیگریشن قوانین میں نرمی کا اعلان

برطانیہ نے ملک میں کورونا وائرس کے باعث سماجی نگہداشت شعبے میں نگہداشت عملے کی کمی کے پیش نظر ہیلتھ کیئر ورکرز کیلئے 12 ماہ کی مدت کے ویزا امیگریشن قوانین میں نرمی کا اعلان کیا ہے۔

برطانوی حکومت کا کہنا ہے کہ عارضی اقدامات اگلے سال کے اوائل میں نافذ العمل ہوں گے اور یہ کم از کم 12 ماہ تک لاگو ہوں گے۔ ویزا کے لیے اہل ہونے کیلئے کم از کم سالانہ تنخواہ 20ہزار 480 پاؤنڈ یعنی کے 27 ہزار 445 ڈالر رکھی گئی ہے۔ جس کے بعد سماجی نگہداشت کے کارکنان، نگہداشت کے معاونین اور گھریلو نگہداشت کے کارکنان 12 ماہ کی مدت کیلئے صحت اور دیکھ بھال کے ویزے کے لیے اہل ہونگے۔

حکومت نے امید ظاہر کی ہے کہ اس اقدام سے افرادی قوت میں خلاء کو پُر کرنا آسان ہوگا۔

یاد رہے کہ برطانیہ نے بریگزٹ کے بعد نئے امیگریشن منصوبوں کا اعلان کیا تھا جس کے تحت بین الاقوامی طلباء کو گریجویشن کے بعد دو سال تک ملک میں کام کرنے کی اجازت دی گئی تھی اور بزنس سکریٹری اینڈریا لیڈسم نے کہا تھا کہ اس تبدیلی کا مقصد دنیا بھر کے روشن ترین اور بہترین لوگوں کو اپنی طرف متوجہ کرنا ہے۔

سکریٹری نے کہا کہ حکومت سائنس، ٹیکنالوجی، انجینئرنگ اور ریاضی پر زور دینے کے ساتھ 2030 تک برطانیہ میں بین الاقوامی طلباء کی تعداد کو 30 فیصد تک بڑھا کر 6 لاکھ کرنا چاہتی ہے۔