روس کا جرمنی کو جواب، سفارتکار ملک بدر کردیے

جہاں ایک طرف روس اور یورپ کے درمیان کشیدگی جاری ہے وہیں دوسری طرف روس نے 2جرمن سفارت کاروں کو ناپسندیدہ شخصیات قرار دیتے ہوئے ملک چھوڑنے کا حکم دیا ہے.

روس نے یہ اقدامات گزشتہ دنوں جرمنی کی طرف سے روسی سفارت خانے کے دو اہلکاروں کو ملک بدر کرنے کے ردعمل کے طور پر سامنے آیا ہے. ان روسی سفارتی اہلکاروں کی ملک بدری کا فیصلہ چیچنیا کے سابق کمانڈر کو 2019 میں جرمنی کے دارالحکومت برلن کے ایک پارک میں گولی مار کر ہلاک کر نے کے معاملے میں کیا گیا تھا۔

برلن کی عدالت نے گزشتہ ہفتے روسی شہری ودم کراسیکوف عرف ودم سکولوف کو عمر قید کی سزا سنائی تھی اور اسے برلن پارک میں 40 سالہ ٹرنائیک کاوتراشویلی کو قتل کرنے کا مجرم ٹھہرایا گیا تھا۔

روسی وزارت خارجہ نے اپنے بیان میں کہا کہ ماسکو میں جرمنی کے سفیر کو آگاہ کردیا گیا ہے کہ روس میں جرمن سفارت خانے کے 2سفارتی ملازمین کو جوابی اقدام کے طور پرناپسندیدہ قرار دیا گیا ہےتاہم وضاحت نہیں کی گئی کہ یہ سفارت کار کب روس چھوڑیں گے۔

دوسری جانب ماسکو کی جانب سے کیے گئے اعلان پر برلن نے ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ روس کا انتقامی فیصلہ غیر متوقع نہیں ہے۔ اس سے دونوں ممالک کے درمیان تعلقات مزید کشیدہ ہوں گے۔

جرمن وزارت خارجہ کے ترجمان کا کہنا تھا کہ اس سلسلے میں جرمن حکومت کے ساتھ مکمل ناانصافی ہوئی ہے۔