جرمنی یورپ میں سب سے بڑا خودکار صنعت کا مالک

ایک نئے سروے کے مطابق جرمنی نے گزشتہ سال یورپ میں سب سے زیادہ خودکار (آٹومیٹڈ) صنعت کے طور پر اپنی پوزیشن برقرار رکھی۔

بین الاقوامی فیڈریشن آف روبوٹکس (آئی ایف آر) کی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ جرمنی میں فی 10 ہزار ملازمین پر صنعتی روبوٹس کی تعداد ریکارڈ 371 یونٹس تک پہنچ گئی۔

سوئیڈن 289 یونٹس کے ساتھ دوسرے نمبر پر رہا۔ یاد رہے کہ عالمی سطح پر جرمنی جنوبی کوریا، سنگاپور اور جاپان کے بعد چوتھے نمبر پر ہے۔

آئی ایف آر کے صدر ملٹن گیوری نے وضاحت کی کہ معیشتوں کے درمیان آٹومیشن کی سطحوں میں فرق کو سمجھنے کے لیے روبوٹ کی کثافت ایک “بہت اہم عنصر” ہے۔

عالمی سطح پر، پچھلے پانچ سالوں میں روبوٹ کی اوسط کثافت تقریباً دوگنی ہو گئی ہے، جو کہ 2015 میں 66 یونٹس سے بڑھ کر 126 یونٹس فی 10 ہزار ملازمین ہو گئی ہے۔

چین نے روبوٹ تنصیبات میں تیزی سے اضافے کی وجہ سے 2015 میں 49 یونٹس سے 2020 میں 246 تک چھلانگ لگائی، جو تائیوان (248 یونٹس) اور امریکہ (255 یونٹس) کے بعد چین کو دنیا بھر میں نویں نمبر پر رکھتا ہے۔

آئی ایف آر کی ایک سابقہ ​​رپورٹ کے مطابق 2020 میں یورپ میں روبوٹ کی کل تنصیبات میں جرمنی کا حصہ 33 فیصد تھا، اس کے بعد اٹلی 13 فیصد اور فرانس 8 فیصد کے ساتھ تھا۔

رپورٹ کے مطابق مجموعی طور پر گزشتہ سال کے مقابلے 2020 میں یورپ میں روبوٹ تنصیبات کی تعداد میں 8 فیصد کمی واقع ہوئی۔