فرینک والٹر اسٹین میئر کی دوسری مدت کیلئے صدر بننے کی راہیں‌ ہموار

جرمنی کے موجودہ صدر فرینک والٹر اسٹین میئر کی تینوں اتحادی جماعتوں ایس پی ڈی (سوشل ڈیموکریٹک پارٹی) گرینز پارٹی اور ایف ڈی پی (فری ڈیموکریٹک پارٹی) سے توثیق حاصل کرنے کے بعد صدارت کی دوسری مدت کیلئے منتخب ہونے کی راہیں ہموار ہوگئی ہیں۔

جرمنی کے صدر کا انتخاب رواں برس کی 13 فروری کو وفاقی پارلیمان کے ارکان اور جرمنی کی 16 ریاستوں کے نمائندوں پر مشتمل ایک خصوصی اسمبلی کے ذریعے کیا جائے گا۔

جرمنی کی اتحادی حکومت کی تینوں جماعتوں کے ووٹ فرینک والٹر اسٹین میئر کو صدارت کیلئے منتخب کرنے کیلئے کافی ہوں گے۔

66 سالہ فرینک والٹر اسٹین میئر2017 سے جرمنی کے صدر کے عہدے پر فائز ہیں۔ جرمن صدر بننے سے قبل فرینک والٹر اسٹین میئر کا تعلق سوشل ڈیموکریٹک پارٹی سے تھا۔ وہ 2017ء میں 5سال کے لیے وفاقی صدر منتخب کیے گئے تھے اور ایک بار پھر اس عہدے کے لیے امیدوار بننا چاہتے ہیں۔

منگل کے روز ایک بیان میں اتحادی حکومت کی ایک جماعت گرینز نے موجودہ جرمن صدر کو ایک بہت اچھا اور انتہائی قابل احترام صدر کے طور پر بیان کیا جنہوں نے ہمارے ملک کے لیے عظیم خدمات انجام دیں۔

ایک جرمن سینئر سیاستدان آرمین لاسیٹ نے اتحادی جماعت کے فیصلے کو درست قرار دیتے ہوئے کہا کہ یہ جرمنی کیلئے خوشی کا سبب ہے کہ جرمنی کو حالیہ برسوں میں فرینک والٹر اسٹین میئر جیسا ایک اچھا سربراہ مملکت ملا۔ فرینک والٹر اسٹین میئرنے بطور وفاقی صدر بڑے احترام اور جذبے کے ساتھ ہمارے ملک میں جمہوریت اور ہم آہنگی کو مضبوط کیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ فرینک والٹر اسٹین میئرنے اپنے عہدے کے پہلے پانچ برسوں میں ملک کیلئے شاندار خدمات سر انجام دیں۔ انہوں نے ایک سنجیدہ، مربوط اور غیر جانبدار انتظامیہ کا مظاہرہ کیا ہے۔