فرانس میں مسجد بند کرنے کا حکم

فرانس کے شمال میں واقع ایک مسجد کو امام کی جانب سے جہاد کے دفاع سے متعلق خطبہ دینے پر بند کرنے کا حکم دیا گیا ہے۔

علاقائی حکام نے اے ایف پی کو بتایا کہ پیرس سے تقریباً 100 کلومیٹر شمال میں واقع 50 ہزاور افراد پر مشتمل قصبے بوویس میں مسجد چھ ماہ تک بند رہے گی۔

واضح رہے کہ فرانس میں شدت پسندی سے تعلق کے شبہ میں اسلامی عبادت گاہوں کی نگرانی کی جاتی ہے۔ جبکہ فرانسیسی حکومت نے اس سال کے شروع میں اعلان کیا تھا کہ وہ عبادت گاہوں اور انجمنوں کی جانچ میں تیزی لائے گی جن پر بنیاد پرست اسلامی پروپیگنڈا پھیلانے کا شبہ ہے۔

400 نمازیوں کی گنجائش والی اس مسجد کے حوالے سے کارروائی کا آغاز 2 ہفتے قبل ہوا تھا جب فرانس کے وزیر داخلہ جیرالڈ ڈرمینن نے کہا تھا کہ مذکورہ مسجد کے امام کی جانب سے خطبوں میں عیسائیوں، یہودیوں اور ہم جنس پرستوں کو نشانہ بنایا جاتا ہے جو کہ ناقابل قبول ہے اس لیے مسجد کو بند کرنے کی کارروائی شروع کی جارہی ہے۔

رپورٹ کے مطابق مسجد کے امام ایک نومسلم ہیں جنہوں نے کچھ عرصہ قبل ہی اسلام قبول کیا ہے۔

مسجد کا انتظام کرنے والی انجمن کے وکیل کا کہنا ہے کہ کہ امام کے ریمارکس کو سیاق و سباق سے ہٹ کر لیا گیا ہے۔